28 فروری .... 1953 !!!
ہم خیبرمیل پر بیٹھ کر لاہور کےلئے روانہ ہوئے-
"خیبر میل وہ گاڑی ہے جو اس پاک دھرتی پر 1947ء سے چل رہی ہے " چاند پوری نے بتایا-
" اور مزے کی بات یہ ہے کہ نہ تو آج تک وقت پر آئ ہے ، نہ ہی وقت پر پہنچ پائ ہے" میں نے کہا-
"یہ گاڑی کا نہیں .... ریلوے انتظامیہ کا قصور ہے "
"70 سال سے انتظامیہ بھی تو نہیں بدلی ... باپ فوت ہوا تو بیٹا بیٹھ گیا ... بیٹا فوت ہوا تو پوتا آ کر بیٹھ گیا ... "
اندرون سندھ تک تو کوئ خاص رش نہ تھا ، لیکن جونہی پنجاب شروع ہوا ایک میلے کا سا سماں بندھ گیا-
ہر طرف ختم نبوّت کے سبز جھنڈوں اور بینروں کی بہار تھی- کیا شہر اور کیا گاؤں ہر طرف ایک جوش اور ولوہ دکھائ دے رہا تھا- صبح چھ بجے ہم رحیم یارخان پہنچ گئے- یہاں کوئ 15 منٹ کا اسٹاپ تھا-
چاند پوری اخبار کی تلاش میں نکلے اور کچھ دیر بعد نوائے وقت لے کر لوٹے-
" ایک کاپی زمیندار کی بھی لے آتے ..... بِک گیا تھا کیا .... ؟؟ "
" بکا نہیں .... بند ہو گیا ہے .... زمیندار بند .... آزاد بند .... چٹان بند .... احسان بند .... ہر وہ اخبار جو ختمِ نبوّت کی بات چھاپتا تھا سرکار نے بند کر دیا ہے .... !!! "
ایک دیہاتی بزرگ پلیٹ فارم پر لوئ لپیٹ کر کھڑے تھے- ہماری بات چیت سن کر پاس چلے آئے-
" کتھوں آ رہے او پائ جی .... ؟"
" کراچی سے .... "
" کی حالات نیں دارلحکومت دے .... مجلس والیاں دی کوئ خیر خبر ؟"
" مجلس عمل کی قیادت تو گرفتار ہو چُکی بابا .... آپ کو نہیں معلوم ؟؟ "
" نئیں پُتّر .... اخبار وچ تے نئیں آیا .... ویسے ایتھے وی سب نوں پھڑ لیا .... "
"حالات بہت خراب ہیں بابا ... "
" پُتّر مینوں تے اے سمجھ نئیں آؤندی کہ مسلم لیگیاں پہلے اسلام دے ناں تے مسلمان نوں گھروں کڈھیا .... تے ہن اسلام دے ناں تے اندر کر ریے نیں .... "
" اندھیر نگری ہے بابا .... اندھیر نگری !!!! "
" آہو تے ہور کی .... پہلے جناح ہوراں نوں بنیرے لایا .... فیر لیاقت علی خان دا کنڈا کڈھیا .... تے ہن مُلک نوں بنیرے لان دا پروگرام ایں ... پہلے مسلم لیگ سی .... ہن مرزائ لیگ بن گئ اے ... "
کراچی میں مجلس کے رہنماؤں کی گرفتاری خُفیہ رکھّی گئ تھی- یہاں تک کہ اخبارات کو بھی بھنک نہ مل سکی- ٹیلی فون ضرور کھڑکائے گئے لیکن یہ آلہ بھی ان دنوں خاص خاص دفاتر میں ہی بجتا تھا- اگلے دن پنجاب بھر میں گرفتاریوں کی لہر چل نکلی- جگہ جگہ چھاپے پڑے تو عوام کو پتا چلا کہ تحریکِ ختم نبوّت کا کڑا مرحلہ "ڈائریکٹ ایکشن" شروع ہو چکا ہے-
چاند پوری نے اخبار میری گود میں پھینکا اور پڑھنے کا حکم نامہ جاری کیا ....
" لاہور میں سرظفراللہ خان کا جنازہ .... "
" کیا ؟؟ .... فوت ہو گئے ؟؟ " وہ ایک دم سیدھے ہو کر بیٹھ گئے-
" نہیں جناب ..... دیال سنگھ کالج کے طلباء نے کل لاہور میں سرظفراللہ خان کا ایک علامتی جنازہ نکالا ... اس موقع پر احمدی اور غیر احمدی طلبہ کے بیچ شدید پتھراؤ ہوا .... متعدد طلبہ زخمی "
انہوں نے ایک ٹھنڈی سانس لیکر سیٹ سے پشت لگا لی-
"قُلفی والا ..... ٹھنڈی قلفی .... چائے والا .... گرم چائے ..." پلیٹ فارم پر صدائیں بلند ہو رہی تھیں-
" اور کوئ خبر ؟؟ " انہوں نے پوچھا-
" قلفی کتنے کی ہے ؟؟ " میں نے کھڑکی سے سر باہر نکال کر پوچھا-
"اک پائ دیاں دو .... "
" ایک پائ نکالئے گا .... " میں نے قلفی پکڑتے ہوئے چاند پوری سے کہا-
"یار تم مجھے پائ پائ کا محتاج کر کے چھوڑو گے ... فروری میں کون قلفیاں کھاتا ہے ؟؟ " انہوں نے ہاکر کو پائ کا سکّہ پکڑاتے ہوئے کہا-
"پچھلے اسٹیشن سے جو پکوڑے کھائے تھے وہ گرمی کر رہے ہیں ... "
"اب اگلے اسٹیشن پر سردی نہ دور کرنے لگ جانا .... پڑھو آگے ... !!! "
" لاہور نامہ نگار .... نارتھ ویسٹرن ریلوے ورکشاپ میں ایک احمدی نے .... ایک غیر احمدی کے سر میں قُلفی مار کے .... اوہ سوری ...... سریا مار کے شدید زخمی کر دیا ..... تفصیلات کے مطابق احمدی کو کئ روز سے طعن و تشنیع کا نشانہ بنایا جا رہا تھا .... احمدی روپوش ... پولیس ملزم کا سراغ لگا رہی ہے..... "
"پولیس تو صدیوں سے سراغ ہی لگا رہی ہے ..... چھپ گیا ہوگا ربوہ میں جا کر .... آگے پڑھئے !!!
"لاہور میں رات بھر جلسے .... احمدیوں کے خلاف اشتعال انگیز تقریریں .... "
"ماشاءاللہ .... لاہور ابھی تک چٹان بن کر کھڑا ہے .... اور کچھ ؟؟ "
" ساھیوال میں غیر احمدیوں نے دو احمدی مبلغین کے مونہہ کالے کر دیے ..... "
"پہلے سفید تھے کیا ؟؟ .... اچھا .... اور کُچھ ؟؟ "
" لاہور میں ایک غیر احمدی دوکاندار نے ایک احمدی عورت کو آٹا فروخت کرنے سے انکار کر دیا"
" گھٹیا خبر ..... اور کچھ ؟؟ "
"سنّت نگر کے ایک پرائمری اسکول میں ایک احمدی بچّے کو چند غیر احمدی بچّوں نے گھیر لیا .... تھپڑ مارے .... اور مرزائ کُتا کے نعرے لگائے ..... "
" اندازہ کرو یار ..... اگر یہی خبریں چھپتی رہیں تو مسلم اور غیر مسلم کی اصطلاح ختم ہو جائے گی .... احمدی اور غیر احمدی ہی رہ جائے گا "
" ویسے حیرت ہے کہ ملک میں ابھی تک کوئ بڑا فساد یا تشدّد کا واقعہ نہیں ہوا " میں نے کہا-
" تین سال تک علماء نے عوام کی تربیّت کی ہے .... تب ان کو سڑکوں پر لے کے نکلے ہیں .... ورنہ آج قادیانیوں کے محلوں سے دھواں نہ اٹھ رہا ہوتا- "
ملتان اسٹیشن پر چاند پوری اترے ، اور واپسی پر درجن بھر سموسے اور " رونامہ مزدور" لیکر پلٹے-
" واہ کیا نظم لکھّی ہے یار .... شاعر نے مزہ آگیا ... سنو گے ؟" انہوں نے اخبار کھولتے ہوئے کہا-
"پہلے سموسے نہ کھا لئے جائیں .... " میں نے تجویز پیش کی-
"نہیں ... پہلے نظم " چاند پوری ضد پہ اتر آئے- " بہت قیمتی نظم ہے .... دیکھو .... تقریباً سال پہلے کا واقعہ ہے .... 19 جولائ 1952ء ... اسی ملتان شہر میں مظاہرین پر پولیس نے اندھا دھند گولی چلائ تھی .... کچھ لوگ سب انسپکٹر مصطفی خان کو تبدیل کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے جس نے ختمِ نبوّت کے پرامن جلوس پر تشدّد کیا تھا .... پندرہ منٹ میں 70 گولیاں چلائ گئیں .... جس سے 6 افراد شہید ہوئے اور 15 زخمی .... ختمِ نبوّت تحریک میں بہنے والا یہ پہلا خون تھا ... اسی واقعہ پر نظم لکھّی ہے شاعر نے .... کمال کے مصرعے ہیں ... "
" پڑھئے .... " میں نے کہا-
چاند پوری پُورے ترنّم سے نظم پڑھنے لگے :
ملتان کے شہیدو !!! ملتان کے ستارو !!!
ملتان تُم پہ قُرباں
ملتان تم پہ نازاں
مسرور ہو گئ ہیں ملتان کی فضائیں !!!
پرنور ہو گئ ہیں ملتان کی فضائیں !!!
ملتان مسکرایا !!!
ملتان جگمگایا !!!
ملتان جھومتا ہے !!!
ملتان چومتا ہے !!!
نقشِ قدم تمہارے ملتان کے دلارو !!!
ملتان کے شہیدو ملتان کے ستارو !!!
" واہ ... سبحان اللہ .... نظم بھی خوب ہے اور آپ کا ترنّم بھی قابلِ داد "
" آداب .... آداب !!! " چاند پوری کھِل اُٹھے-
" لکھی کس نے ہے اتنی خوبصورت نظم ؟"
" لاہور کا ایک مست حال شاعر ہے .... فٹ پاتھ پر رہتا ہے .... لوگ کہتے ہیں نشہ کرتا ہے .... ساغر صدیقی !!! "
" ساغر صدیقی ؟؟ ".... واہ .... سبحان اللہ .... !!! "
" یہ سچّے رب کی عطاء ہے بھائ ..... جو بات بڑے بڑے عالی دماغ نہ سمجھ سکے .... رب تعالی نے ایک خانماں برباد ، مست حال شاعر کو سمجھا دی .... خوش نصیب ہے وہ شخص جو ختمِ نبوّت کے کام میں کہیں نہ کہیں استعمال ہو گیا .... اور انتہائ بدنصیب ہے وہ انسان جو اس تحریک کے سامنے پتھر کا بُت بن کر کھڑا ہو گیا ..

Labels:
Reactions: 

Enter your email address:

Delivered by FeedBurner

Live Match Score

فیس بک پر تلاش کریں

مفت اکاؤنٹ کھولیں

Jobs Career in photography today!

Jobs Career in photography today!
Click on ads and grab your job.

گوگل پلس followers

گوگل پلس followers