ایران نے تو یمن، پاکستان ، افغانستان ،شام اور ایراق میں خمینی کے دور سے ہی حملہ کیا ہوا ہے، ان علاقوں میں ایران اور اپنے مغربی اتحادیوں کی مدد سے پچاس لاکھ سنی مسلمان مار چکا ہے۔ ایران اپنی ساری توانای سنی مسلمانوں کو مارنے کے لیے ہی صرف کر رہا ہے۔ ایران کی بدمعاشیاں صرف پاکستان میں چلتیں ہیں اور ہر جگہ یہ امریکہ کی مدد سے بدمعاشیاں کرتا ہے۔ پاکستان میں یہ شیعہ لوگ عوام کی مذہبی اور سیاسی عقائد سے ناواقفیت کی وجہ سے کامیاب ہیں۔ جب تک پاکستان کی عوام کلهی طور پر ایران کے مذہبی اور سیاسی عقائد سے واقف نہیں ہو جاتے پاکستان میں بھی شیعہ سنیوں کو نشانہ بناتے رہینگے.
آج سعودی عرب نے یمن کے دارالحکومت صنعا پر فضائی حملہ کر دیا اور سعودی حکومت کا کہنا ہے کہ باغیوں کے خاتمے تک یہ جنگ جاری رہے گی۔ایسے حالات میں جب پاکستان اور سعودیہ میں تعلقات اور مضبوط ہونے جا رہے ہیں تو پاکستان کے اندر سے غدار بھی کھل کر سامنے آنا شروع ہوگے ہیں اور ایران کے ساتھ وفاداری دکھانے کے لیے فوج پر بھونک رہے ہیں ایسے ٹائم میں پاکستانیوں کو ایسے غداروں کو لازم پہچاننا چاہئے کہ یہی شیعہ اور قادیانی پاکستان میں بهی اپنے گندے مذہب کی بالادستی قائم کرنا چاہتے ہیں اور پاکستانی عوام کی دین سے بے خبری اور وطن سے اندهی محبت کا فائدہ اٹھا کر یہ شیعہ اپنے آپ کو سچے محب وطن پاکستانی ظاہر کرنے کی کوشش کرتے ہیں مگر یمن کے معاملے کے بعد کسی کو شک میں نہیں رہنا چاہئے کہ یہ لوگ پاکستان میں ہر اس پالیسی کو اختیار کرینگے جس کی وجہ سے انکو تحفظ مل سکتا ہو.
پاکستان فوج کو چاہیے کہ وہ امین شھیدی ، فیصل رضا عابدی، حیدر عباس رضوی، زید حامد عرف لعل ٹوپی سرکار اور زرداری جیسے لوگوں پر اعتبار نہ کرے یہ ایران کے پکے ایجنٹ ہیں اور اسلام کے پکے دشمن ہیں انکو پہچانو، آمین شھیدی تو غلط احادیث بھی شئیر کرتا ہیں، ان کی تنظیمیں جن کے ذریعے یہ سنیوں کا قتل کراتے رہتے ہیں وہ یہ ہیں۔
سپاە محمد،امامیہ ارگنائزیشن،منتظر امام مہدی،خمینی ٹائیگرز،ہزارە ٹائیگرز، ہزارە ڈیموکریٹک پارٹی،پاڑاچنار فورس،حیدری طالبان،مہدی ارمی،سپاە محمد،حزب الله، مختار فورس،ابو تراب اسکاوٹس، تحریک نفاز فقہ جعفریہ،پاک حیدری اسکاوٹس، جعفریہ اسکاوٹس،سجادیہ اسکاوٹس، امامیہ اسکاوٹس،مہدی ملیشیا،لشکر مہدی۔
ان تمام دہشت گرد تنظیموں کے لوگ جعفریہ اسٹو ڈینٹس ارگنائزیشن، مجلس وحدت مسلیمین (کافرین)، امامیہ اسٹو ڈینٹس ارگنائزیشن، جعفریہ ایلا ئینس اور شیعہ علما کونسل نامی تنظیموں میں کام کرتے ہیں۔ان کی کل تعداد دس ہزار سے زیادە نہی ہو سكتى.
پاکستانیوں کو چاہئے کہ جہاں بهی ملے ہاتھ صاف کرکے پاکستان کو امن کا گہوارہ بنائے.
Labels:
Reactions: 

Enter your email address:

Delivered by FeedBurner

Live Match Score

فیس بک پر تلاش کریں

مفت اکاؤنٹ کھولیں

Jobs Career in photography today!

Jobs Career in photography today!
Click on ads and grab your job.

گوگل پلس followers

گوگل پلس followers