انسا ن کی اپنے ماضی اور تاریخ کے ساتھ اتنی گہری وابستگی ہے کہ جب سے تھئیٹر ، ڈرامہ اور فلم کا آغاز ہو ا۔اُن میں تاریخ کا موضوع زیر بحث رہا۔ 1913ء میں جب ہندی سنیما کا آغاز ہوا اس میں پہلی ریلیز ہونے والی خاموش فلم راجہ ہری چندر تھی جو رامائن اور مہابھارت کے تاریخی کرداروں کے حوالے سے تیار کیا گئی تھی ۔ فلمساز دادا پھالکے کی یہ فلم نہ صرف آج کی عظیم الشان بالی وڈ انڈسٹری کی بنیاد ہے بلکہ اس نے تاریخی فلمیں پروڈیوس کر نے کی ایسی روایت رکھی جو آج تک قائم و دائم ہے ۔بالی وڈ میں اب تک بننے والی سب سے شاندار اور کامیاب ترین تاریخی فلم مغل اعظم ہے ۔ 1960ء میں ریلیز ہونے والی اس فلم کی مقبولیت کا یہ عالم تھا کہ لوگ بستروں سمیت سنیما گھروں کے باہر آن بیٹھے تھے تاکہ انہیں جب بھی بے پناہ رش میں موقع ملے تو وہ مغل دور کی اس رومانی داستان کا دیکھ سکیں ۔ دلیپ کمار اور مدھوبالا کی حسین ترین جوڑی ، پرتھوی راج کی اکبر بادشاہ کے طور پر بارعب اداکاری ، نوشاد کی موسیقی اور کے آصف ۔کی ہدایتکاری نے اس فلم کو حقیقی معنوں میں سنیما کا ماسٹر پیش بنادیا تھا۔ایک شہزادے اور کنیز کی یہ باغی محبت اِس خوبصورت انداز سے بڑی اسکرین پر پیش کی جاسکتی ہے ، فلم بینوں کو اِس کا اندازہ نہیں تھا ۔ اسی لئے جب انہوں نے مغل محلات کے Larger Than Lifeسیٹس، خوبصورت اور نازنین مدھو بالا کی مشہور و معروف گانے پیار کیا تو ڈرنا کیا پر پرفارمنس دیکھی تو ششدر رہ گئے ، مغل اعظم کی ریلیز کے ساتھ ہی بالی وڈ میں تاریخی فلموں کا موضوع نکتہ عروج پر پہنچ گیا اور یہاں کئی مزید ایسی فلمیں تیار ہوئیں۔ 1963میں مغل خاندان پر ایک نئی فلم تیار کی گئی جس کا نام تاج محل رکھا گیا تھا ۔ شہنشاہ شاہ جہاں اور ملکہ ممتاز محل کی پریم کہانی کوتاج محل میں خوبصورتی کے ساتھ پیش کیا گیا تھا ۔ نوے کی دہائی میں تاریخی واقعات پر فلمیں بنانے کا رحجان نہ ہونے کے برابر نظر آیا جس کی وجہ شاید یہ تھی اس دور میں ایکشن اور رومانی فلمیں بنانے کا ٹرینڈ زور پکڑ چکا تھااور اس دوران زیادہ تجرباتی کام بھی نہیں ہوا۔بہرحال بالی وڈ میں تاریخ کے حوالے سے سکوت 2001ء میں جاکر ٹوٹاجب شاہ رخ خان نے ایک عظیم ہندوستانی بادشاہ اشوکا پر فلم بنانے کا فیصلہ کیا۔ لیکن اس فلم میں لوگوں کی امنگوں اور باکس آفس ٹرینڈ سے مطابقت رکھنے کے لئے حقائق کو کافی حد تک توڑ مرو ڑ کر پیش کیاگیا تھا۔ شاہ رخ خان نے اشوکا کا کردار نبھایا تو کرینہ کپور نے حسین اداکارہ کو رواکی کے طور پر اداکاری کی ۔انو ملک کی موسیقی کے ساتھ اس فلم کے گانے بے حد مقبول ہوئے جن میں سن سنا ، رات کا نشہ اور روشنی شامل تھے ۔ یہ فلم باکس افس پر کامیاب رہی لیکن تاریخ دان اس پر بھرپور انداز میں تنقید کرتے نظر آئے کیونکہ ان کا خیال تھا کہ فلم میں شہنشاہ اشوکا کے کردار کو حقیقت سے ہٹ کر پیش کیا گیا تھا۔2001 میں ہی عامر خان کے فلمی کیرئیر کے سنہری اور کامیاب ترین کیرئیر کا آغاز ہوا جس کی وجہ تھی ان کی ہوم پروڈکشن لگان ۔ یہ ہندی سنیما کی تاریخ کی کامیاب ترین فلموں میں سے ایک تھی ۔ دلچسپ بات یہ تھی کہ یہ فلم کسی حقیقی واقعہ کو پیش نہیں کرتی تھی لیکن ہدایتکار اشوتوش گواریکر نے اس فلم میں کرکٹ ، حب الوطنی ، غیر ملکی آقاوں سے نفرت اور رومانس کو خوبصورت کہانی اور لاجواب موسیقی کے ساتھ کچھ یوں پیش کیا کہ فلم بین اس کے سحر میں آگئے۔ اس فلم کی کامیابی اور بہترین پروڈکشن کو دیکھتے ہوئے ، آسکر ایوارڈز کے لئے بھی نامزد کیا گیاتھا۔ لگان کو لاتعدادملکی اورغیر ملکی ایوارڈز سے نوازا گیا جس نے اس کو مغل اعظم کے بعد تاریخ پر بننے والی کامیاب ترین فلم بناڈالا۔عامر خان کی اگلی تاریخی فلم رنگ دے بسنتی تھی جو 2006ء میں ریلیز ہوئی۔یہ ایک ڈرامہ فلم تھی جو کچھ منچلے نوجوانوں کا احاطہ کرتی تھی مگر ہدایتکار اوم پرکاش مہرہ نے اس میں جدو جہد آزادی کے زمانے کے اہم کردار چند شیکھر آزاد اور بھگت سنگھ کو نوجوانوں کے خوبصورت رُوپ میں پیش کیا۔ ان کا یہ تجربہ کامیاب رہا اور رنگ دے بسنتی بالی وڈ کی کامیاب ترین فلموں میں سے ایک قرار پائی۔تاریخ کے حوالے سے بالی وڈ کی آخری کامیاب ترین فلم جودھا اکبر تھی جو 2008ء میں ریلیز ہوئی تھی ۔ اس فلم میں ہم نے ہریتک روشن کو بطور اکبر بادشاہ اور ایشوریا رائے کو مہارانی جودھا بائی کے طور پر دیکھا۔ اشوتوش گواریکر کی یہ فلم اپنے خوبصورت مناظر، گیت اور اداکاری کے باعث بے حد بھائی ۔ بالی وڈ کے بیڈ بوائے صلو میاں کو بھی تاریخی ہیرو بننے کا شوق چرایا تھا جس پر وہ ویر بنے ۔ لیکن یہ فلم باکس آفس پر بری طرح پٹ گئی۔ اس ناکامی کو دیکھتے ہوئے اب فلمساز تاریخی حوالوں پر فلم بنانے میں محتاط نظر آتے ہیں اسی لئے دلیپ کمار نے ایک دفعہ کہاتھا کہ تاریخ کے خارزار میں قدم رکھتے ہوئے فلمساز کو کئی دفعہ سوچنا چاہیے کیونکہ یا تو وہ عرش پر جائے گا یا پھر منہ کے بل فرش پر ۔اس میں درمیانی راہ کوئی نہیں۔
Labels:
Reactions: 

Enter your email address:

Delivered by FeedBurner

Live Match Score

فیس بک پر تلاش کریں

مفت اکاؤنٹ کھولیں

Jobs Career in photography today!

Jobs Career in photography today!
Click on ads and grab your job.

گوگل پلس followers

گوگل پلس followers