قاضی محمد اختر جونا گڑھی
1936ء کا ذکر ہے۔ یہ کوئی قدیم رومانی یا عشقیہ داستان نہیں! برطانیہ کے کنگ ایڈورڈ ہشتم ڈیوک آف ونڈ سر کا جو جارج پنجم کے حقیقی بھائی اور موجودہ برطانوی ملکہ الزبتھ کے سگے چچا تھے۔ اس زمانے میں برطانیہ کے شاہی خاندان سے باہر شادیاں کرنا سخت ممنوع تھا۔ اگر کوئی ایسا کرتا تو اسے شاہی خاندان سے نکال دیا جاتا تھا۔ اس سلسلے میں سب سے پہلی مثال کنگ ایڈورڈ ہشتم نے قائم کی تھی- تفصیل سے پڑھیے

جنھوں نے اپنی عمر سے بڑی اور قد میں لمبی دو مرتبہ کی طلاق یافتہ امریکی خاتون مسز والس سمپن سے پہلے محبت کی اور پھر اس سے شادی کرنے کی خاطر برطانیہ کے تخت و تاج کو ٹھکرا دیایہ کہہ کر کہ ”آج محبت نے سیاست پر فتح حاصل کرلی ہے۔“ دوسری مثال موجودہ ملکہ برطانیہ الزبتھ کی چھوٹی بہن شہزادی مارگریٹ کی ہے جس نے برطانوی فوج کے گروپ کیپٹن پیٹرٹاؤن سینڈکو دل دے دیا لیکن شادی بالآخر شاہی محل کے فوٹو گرافر لارڈ اسنوڈاؤن سے کی کیونکہ اسے برطانیہ کے شاہی آداب کے مطابق ایک فوجی سے معاشقے اور شادی کی اجازت نہیں دی گئی تھی۔
کنگ ایڈورڈ ہشتم نے مسز سمپن کو اپنی دلھن بناکر۔ برطانیہ کا تاج اور تخت چھوڑ دیا۔ یاد رہے کہ جس زمانے کا یہ واقعہ ہے برطانیہ کی نو آبادیات میں سورج غروب نہیں ہوا کرتا تھا۔ اپنی نوبیاہتا دلھن کو لے کر وہ برطانیہ سے فرانس چلاگیا اور پیرس کے ایک پرانے قلعے میں رہائش اختیار کر لی۔ سالہاسال اسی طرح گزر گئے۔ آخر ایک دن موجودہ ملکہ برطانیہ پیرس گئیں، اپنے چچا اور چچی دونوں سے ملیں اور چچی کو ڈچز آف ونڈ سر کا خطاب دے کر واپس برطانیہ آگئیں۔ گویا انھوں نے اس شادی کو تسلیم کر لیا تھا۔ چچی کو ڈچز آف ونڈ سر کا خطاب ملنے کے بعد ہی کنگ ایڈورڈ ہشتم ڈیوک آف ونڈ سر نے برطانیہ آنے پر آمادگی ظاہر کی تھی۔ بعد میں ان کی زندگی پر ایک دستاویزی فلم بھی تیار کی گئی۔ اب اس داستان کا دوسرا حصہ بھی جان لیجیے۔ پیرس کے جس قلعے میں کنگ ایڈورڈ ہشتم اور مسز سمپن مقیم تھے۔ اسے لیڈی ڈیانا کے محبوب دودی الفائد نے خرید لیا تھا جو لندن کے مشہور ڈپارٹمنٹل اسٹور (HARRODS) کے مالک محمد فائد کا اکلوتا بیٹا تھا) تاکہ وہ لیڈی ڈیانا سے شادی کے بعد اس قلعے میں رہ سکے لیکن انسان اپنی تدبیر کرتا رہتا ہے اور تقدیر کھڑی ہنستی رہتی ہے۔ دودی الفائد اور لیڈی ڈیانا کو ایک سازش کے تحت ٹریفک کے ایک جان لیوا حادثے میں ہلاک کر دیا گیا۔ ان دونوں کو پیرس کے اس قلعے میں رہنا نصیب نہ ہوسکا۔ خدا جانے یہ اتفاق ہے یا کسی منصوبہ بندی کا کمال۔
Labels: , ,
Reactions: 

Enter your email address:

Delivered by FeedBurner

Live Match Score

فیس بک پر تلاش کریں

مفت اکاؤنٹ کھولیں

Jobs Career in photography today!

Jobs Career in photography today!
Click on ads and grab your job.

گوگل پلس followers

گوگل پلس followers